اونٹ یا گائے میں کتنے حصے

گائے سات افراد کی طرف سے اور اونٹ بھی سات افراد کی طرف سے ہے۔

حدیبیہ میں اونٹ اور گائے میں سات سات افراد کی طرف سے قربانی کی۔

(ابوداؤد کتاب الضحایا2808،2829مسلم کتاب الحج 1318)

  قربانی کے موقع پر : عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہما سے روایت ہے ہم رسول اللہ ﷺ کے ساتھ سفرمیں تھےکہ عیدالاضحی آگئی،

چنانچہ ہم نے دس دس آدمیوں کی طرف سے ایک ایک اونٹ نحر اور سات سات کی طرف سے ایک ایک گائے مشترکہ طورپرذبح کی ۔

ابن ماجه 3131، والترمذي905,1501، وابن خزيمة 2908، وابن حبان 4007، 

تہامہ کے علاقے ذوالحلیفہ کے مقام پر رسول اللہ ﷺ نے ایک اونٹ دس بکریوں کے برابرقراردیا

اور اس کے مطابق مال غنیمت کے جانور تقسیم فرمائے(بخاری کتاب الشرکہ 2507،مسلم 1968)